بے نامی اثاثے ظاہر کرنے کے لئے ایمنسٹی اسکیم کی مدت کا آج آخری روز

بے نامی اثاثے ظاہر کرنے کے لئے ایمنسٹی اسکیم کی مدت کا آج آخری روز ہے، رات 12 بجے کے بعد بے نامی جائیدادوں کی ضبطی شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اثاثے ظاہر کرنے کی اسکیم سے فائدہ اٹھانے کا آج آخری روز ہے۔ فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے چیئرمین شبر زید کے مطابق اب تک اسکیم سے ایک لاکھ 5 ہزار افراد نے فائدہ اٹھایا ہے۔

چیئرمین کے مطابق اسکیم سے ملکی معیشت کو 45 ارب کا فائدہ ہوگا۔ اثاثے ظاہر کرنے کی اسکیم میں اس سے قبل 3 دن کے لیے آج تک کی توسیع دی گئی تھی۔ ایف بی آر کی طرف سے واضح کیا جاچکا ہے کہ اسکیم میں مزید توسیع نہیں ہوگی۔

ایف بی آر کی جانب سے آج رات 12 بجے کے بعد سے بے نامی جائیدادوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کیا جائے گا۔

ایف بی آر نے اثاثے ظاہر کرنے کا فارم ویب پورٹل پر اپ لوڈ کر رکھا ہے، شہری ویب پورٹل کے فارم پُر کر کے آن لائن اپنے اثاثہ جات ظاہر کرسکتے ہیں۔

مقامی اثاثہ جات ظاہر کرنے کیلئے ڈیکلریشن فارم میں اثاثوں کی الگ الگ تفصیل دینا ہوگی، اثاثہ جات پر عائد ٹیکس کی شرح اور اس پر لاگو ٹیکس واجبات کی رقم کی تفصیل دینا ہو گی۔

فارم میں ہر کیٹیگری کے اثاثے، ٹیکس کی شرح اور واجب الادا ٹیکس کی رقم کے الگ الگ کالم بنائے گئے ہیں، ڈکلریشن فارم میں اوپن پلاٹ، زمین، سُپر اسٹرکچر اور اپارٹمنٹ ظاہر کرنے کیلئے ڈیڑھ فیصد ٹیکس دینا ہوگا۔

اسکیم عدالتوں میں زیر التوا کیسز کے لیے نہیں ہوگی۔ سنہ 2000 کے بعد سرکاری عہدہ رکھنے والے اسکیم سے فائدہ نہیں اٹھا سکیں گے،بے نامی دار کوایک سے سات سال قید کی سزا سنائی جاسکے گی،غلط معلومات فراہم کرنے یا جعلی اکاؤنٹس رکھنے پر چھ ماہ سے پانچ سال قید ہوگی۔

واضح رہے کہ وفاقی کابینہ نے 14 مئی کو اثاثے ظاہر کرنے کی اسکیم کی منظوری دی تھی۔ اسکیم کا اطلاق بے نامی بینک اکاؤنٹس پر بھی ہوگا۔