نئے سال کی آمد کے موقع پر شہر بھر کے مختلف واقعات میں 18 افراد زخمی

سال نو کی آمد کے موقع پر شہر بھر میں ہوائی فائرنگ اور آتش بازی کے مختلف واقعات میں 18 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

پولیس ہوائی فائرنگ کی روک تھام میں ناکام ہوگئی ہیں۔ واضح رہے گذشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد سمیت چاروں صوبوں میں نئے سال کے جشن کے موقع پر ہوائی فائرنگ پرپابندی عائد کی تھی۔ جس پر عملدرآمد کرانے میں پولیس مکمل طورپر ناکام ہوگئی ہے۔

زخمیوں کو کراچی کے مختلف اسپتالوں میں منتقل کردیا گیا۔زخمی ہونے والو ں میں کمسن بچی بھی شامل ہے۔ پولیس حکام کے مطابق لیاقت آباد، ناظم آباد، لیاری، کینٹ اسٹیشن، پرانی سبزی منڈی، لانڈھی، گلستان جوہر، گارڈن، ایف بی ایریا، ایئرپورٹ، نارتھ ناظم آباد، طارق روڈ اور رنچھوڑ لائن سمیت دیگر علاقوں میں نئے سال کی آمد پر ہوائی فائرنگ کے واقعات رپورٹ ہوئے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ عائشہ منزل پر ہوائی فائرنگ کے نتیجے میں 7 سالہ بچی زخمی ہوئی، جسے فوری طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کردیا گیا۔

خیال رہے کہ دنیا کے مختلف ممالک سمیت پاکستان میں سال 2019 کا آغاز ہوگیا جس کی آمد پر ملک کے مختلف شہروں میں آتشبازی کا شاندار مظاہرہ کیا گیا۔یاد رہے کہ محکمہ داخلہ سندھ کی جانب سے موٹر سائیکل پر ڈبل سواری پر پابندی کا فیصلہ واپس لے لیا گیا، وزیر اعلیٰ سندھ نے نوٹی فکیشن کو معطل کرنے کا حکم جاری کیا تھا۔

واضح رہے کہ محکمہ داخلہ سندھ نے آج نوٹی فکیشن جاری کیا تھا جس کے تحت کراچی میں نئے سال کے موقع پر دو روز کے لیے ڈبل سواری پر پابندی عائد کرنے کا کہا گیا تھا۔