ساؤتھ ایشن گیمز 2021 کی میزبانی پاکستان کرے گا

پاکستان 2021 میں شیڈول ساؤتھ ایشن گیمز کی میزبانی کرے گا اور اس سلسلے میں پاکستان اولمپک ایسوسی ایشن کے صدر سید عارف حسن نیپال کے شہر کھٹمنڈو پہنچ گئے ہیں جہاں وہ 10 دسمبر کو گیمز کی اختتامی تقریب میں 2 سال بعد ہونے والی گیمز کا روایتی پرچم وصول کریں گے۔

پی او اے کے صدر عارف حسن کا کہنا ہےکہ 2004 کے بعد 17 برس بعد پاکستان ایک بار پھر ان گیمز کی میزبانی کرنے جارہا ہے، جو ہم سب کے لیے ایک اعزاز ہے۔ اس بار ان گیمز کو 2 سے 3 شہروں میں کرانے کی تجویز ہے، 2004 میں صرف ایک شہر اسلام آباد میں 15 گیمز کرائی گئی تھیں۔ اس بار زیادہ ایونٹس ہوں گے۔ وفاقی اور صوبائی حکومت سے بات چیت کرکے تمام وینوز کو فائنل کریں گے۔

سید عارف حسن نے کہا کہ یہ گیمز کسی ایک فرد، ادارے کی نہیں، یہ پورے پاکستان کی گیمز ہوں گے، ہم سب کو مل کر انہیں کامیاب بنانا ہے۔ دنیا کو یہ دکھانا ہے کہ پاکستان ہر قسم کے انٹرنیشنل ایونٹس کرانے کا اہل ہے اور کھیلوں سے محبت کرنے والوں کی یہ سرزمین ہے۔

نیپال گیمز میں پاکستانی اتھلیٹس کی پرفارمنس کے بارے میں عارف حسن نے کہا کہ یہ سب بروقت اور بہترین طریقے سے نیشنل گیمز کے کامیاب انعقاد کی وجہ سے ممکن ہواہے۔ آرمی، واپڈا، خیبر پختونخوا حکومت، کے پی کے اولمپکس ایسوسی ایشن، تمام آرگنائزر، محکموں، صوبائی ٹیموں کے بھرپور تعاون کی وجہ سے نیشنل گیمز میں اتھلیٹس کو تیاری کا سنہری موقع ملا، اگر ان گیمز کے ساتھ تربیتی کیمپ بھی زیادہ دن کے لگائے جاتے تو مجھے یقین ہے کہ ان میڈلز کی تعداد اور زیادہ ہوسکتی تھی۔

تمام میڈلز ونرز نے پاکستان کا نام روشن کیا ہے، گوہاٹی میں ہونے والی گیمز میں پاکستان کو صرف بارہ گولڈ میڈل ملے تھے لیکن نیپال میں پاکستانی اتھلیٹس کی پرفارمنس بہت شاندار جارہی ہے جس پر ہم سب کو ان اتھلیٹس کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیے۔