قصور میں دوہرے قتل کی سفاکانہ واردارت

صوبہ پنجاب کے ضلع قصور میں دوہرے قتل کی سفاکانہ واردارت پیش آئی، جہاں ایک لڑکے اور لڑکی کی لاشیں درخت سے لٹکی ہوئی برآمد ہوئیں۔

پولیس ذرائع کے مطابق دونوں کو گلے میں پھندا ڈال کر قتل کیا گیا اور لاشیں قصور بائی پاس کے قریب کھیتوں میں درخت سے لٹکا دی گئیں، جس کی اطلاع مقامی افراد نے پولیس کو دی۔

پولیس ذرائع نے بتایا کہ مقتول لڑکے کی عمر 25 سال اور وہ لاہور کے علاقے اچھرہ کا رہائشی ہے، جس کے پاس سے شناختی کارڈ اور موبائل فون بھی ملا ہے۔

دوسری جانب لڑکی کی عمر 16 سے 17 سال کے لگ بھگ ہے، تاہم اس کی شناخت نہیں ہوسکی اور نہ ہی یہ علم ہوسکا کہ اس کا تعلق کہاں سے ہے اور وہ یہاں کیسے پہنچی۔

عینی شاہدین کے مطابق لڑکی برقع پوش تھی جبکہ لڑکے نے سرخ جیکٹ اور شلوار قمیض پہن رکھی تھی۔

پولیس نے شبہ ظاہر کیا ہےکہ دونوں کو یہاں لاکر قتل کرکے واقعے کو خودکشی کا رنگ دینے کی کوشش کی گئی۔

ڈی پی او قصور کے مطابق پولیس نے لاشیں پوسٹ مارٹم کے لیے بھجوا کر مختلف پہلوؤں پر تفتیش شروع کر دی ہے جبکہ فرانزک ماہرین نے بھی جائے وقوع سے مختلف نمونے حاصل کرلیے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکی کی شناخت، جوڑے کے گھر والوں سے بات چیت اور پوسٹمارٹم اور فرانزک رپورٹس ملنے پر اصل حقائق سامنے آ جائیں گے۔